Author Topic: درد آشنا شخص کا بیدرد جنازہ  (Read 354 times)

0 Members and 2 Guests are viewing this topic.

Offline Aafaque Ehsen

  • Administrator
  • ********
  • Join Date: Feb 2017
  • Location: Pakistan
  • Age: 69
  • Posts: 65
  • Karma: +350/-0
  • Gender: Male
  • Life doesn't stand still . . .
    • Ali Abbas Jalalpuri Forum
درد آشنا شخص کا بیدرد جنازہ
« on: February 20, 2017, 01:46:45 PM »

درد آشنا شخص کا بیدرد جنازہ




وہ عوام میں سے تھا مگر قدرے مختلف -  بتایا گیا ہے کہ اس نے انیس سال کی عمر میں بے سر و سامانی کے عالم میں بٹوارے کے وقت ہجرت کی اور پاکستان آ  بسا -  اس میں اور باقی انبوہ میں فرق یہ تھا کہ اس نے اپنے ہی ایسے دوسرے بے سر و سامانوں کے درد کا مداوا بننے کی ٹھان لی -

اٹھاسی سال کی عمر میں وہ پرسوں رات چل بسا - انسٹھ سال جو اس نے پاکستان میں گزارے، اس ملک میں دردمندی اور دردآشنائ کی یکتا  داستان ہے-

ایک غریب گھر کا یہ بیٹا، عمر بھر غریبوں کی دستگیری کرتا ر ہا، جاتے جاتے  بھی بصارت سے محروم دو لوگوں کو  بینائ دے گیا  مگر "سرکار" کی کور بینی کے باعث  اس کے شہر کے غریب اس کے جنازے میں شریک نہ ہو سکے - اسے "سرکاری اعزاز" کے ساتھ دفن کیا گیا - اس "سرکای اعزاز" کی قیمت بھی غریبوں ہی کو چکانی پڑی -

ایدھی نے اپنی  زندگی میں لاکھوں، شاید کروڑوں زندگیوں کو مہربان ہاتھوں سے چھوا، ان کے دردوں کا مداوا کیا، مگر کراچی میں ایدھی کے لاکھوں چاہنے والوں کو اس کی موت کے رنج کے ساتھ ساتھ، اس کے جنازے میں نہ شریک ہو سکنے کا درد بھی سہنا پڑا -

یار تم سب اپنی اپنی انفرادی حیثیت میں، اپنے اپنے شہر میں ایدھی کی غائبانہ نمازِجنازہ پڑھ سکتے تھے، اس کی تدفین کے بعد اس کی قبر پہ جا سکتے تھے، ایک ایک کر کے علاحدہ علاحدہ جاتے تو میڈیا کوریج بھی بہتر ملتی، کراچی کے غریب اپنے درد آشنا کو کندھا تو دے لیتے-



نوٹ: یہ میں نے اپنے پرانے فورم میں عبدلستّّار ایدھی کے انتقال کے چار دن بعد پوسٹ کیا تھا - یہ آج بھی اتنا ہی ہمارے حالات کے مطابق ہے جتنا اس وقت تھا



« Last Edit: April 26, 2017, 09:35:05 PM by Aafaque Ehsen »
Have forgotten writing